fbpx
Advertisement
Advertisement

پاکستان سے ہر ماہ 2 ارب ڈالر افغانستان جارہے ہیں

Businessپاکستان سے ہر ماہ 2 ارب ڈالر افغانستان جارہے ہیں
Advertisement

کرنسی ڈیلرز کا کہنا ہے کہ ہمارے پورٹ سے وہ مال افغانستان جاتا ہے اور وہاں سے ٹرکوں کے ذریعے واپس پاکستان آجاتا ہے، اس وقت ملک کو ایک ارب ڈالر کا نقصان صرف افغان ٹرانزٹ ٹریڈ کی مد میں ہورہا ہے۔

ملک بوستان کے مطابق اس گھناؤنے عمل میں ملوث درآمد کنندگان ناصرف ڈیوٹی کی مد میں قومی خزانے کو اربوں روپے کا نقصان پہنچا رہے ہیں بلکہ ڈالر باہر روک کر رکھ رہے ہیں۔

Advertisement

انہوں نے کہا کہ ایک کنٹینر پر ان کا خرچہ 25 لاکھ روپے جبکہ بچت 75 لاکھ روپے ہے، رواں مالی سال کی پہلی سہ ماہی کے دوران ٹرانزٹ ٹریڈ کے ذریعے 15 ہزار کنٹینر پاکستان سے افغانستان گئے، جن کا اوسط اس سے قبل 3 ہزار کنٹینر ہوتا تھا۔

فاریکس ڈیلرز کا مزید کہنا تھا کہ پاکستان کی ترسیلات زر 3 ارب ڈالر سے 2 ارب ڈالر پر آگئی ہیں، کیونکہ ایک ارب ڈالر حوالہ ہنڈی کی نظر ہورہے ہیں، قانونی ترسیلات زر پر 225 روپے فی ڈالر ادائیگی کی جارہی ہے جبکہ حوالہ، ہنڈی والے انہیں 270 روپے تک دے رہے ہیں، اس کے علاوہ پاکستان نے افغانستان سے کوئلہ درآمد کیلئے معاہدہ کیا تھا، جس کے مطابق اس کی ادائیگی پاکستانی روپے میں کرنی تھی لیکن اب افغانی ایکسپورٹرز نقد ڈالر یا دبئی میں ادائیگی کا کہہ رہے ہیں اور اگر کوئی امپورٹر پاکستانی روپے میں ادائیگی کیلئے اصرار کرتا ہے تو اس سے ڈالر کے بلیک ریٹ 250 روپے کے حساب سے وصولی کئے جاتے ہیں۔

ملک بوستان کے مطابق افغانستان سے روزانہ ایک سے ڈیڑھ کروڑ ڈالر کا کوئلہ منگوارہے ہیں جبکہ ڈرائی فروٹ، سبزیاں اور معدنیات کو بھی ملایا جائے تو یہ 25 سے 30 ملین ڈالر روزانہ افغانستان جارہے ہیں۔

Advertisement


کرنسی ڈیلرز کے مطابق دلچسپ بات یہ ہے کہ ہم افغانستان جو ایکسپورٹ کررہے ہیں اس کیلئے بھی وہ ہم سے ہی ڈالر لے کر ہمیں ادا کررہے ہیں، اس کے علاوہ روزانہ 15 ہزار لوگ پاک افغان بارڈر کراس کرتے ہیں، پہلے ہر شخص کو 10 ہزار ڈالر لے جانے کی اجازت تھی بعد میں یہ کم کرکے ایک ہزار کردی گئی لیکن افغانستان جانے والوں کو ڈالر کی کوئی ضرورت نہیں وہ پاکستانی روپے میں اپنی ضرورت پوری کرسکتے ہیں۔

ملک بوستان نے پریس کانفرنس میں خطاب کرتے ہوئے کہا کہ 2 ماہ قبل طالبان حکومت نے پاکستانی روپے کو افغانی یا دیگر کرنسیوں میں منتقل کرنے کا سرکلر جاری کیا تھا، اس سرکلر کے بعد لوگوں کے پاس اربوں، کھربوں پاکستانی کرنسی تھی جو انہوں نے ڈالر میں منتقل کرنا شروع کردی، پاکستانی حکومت کو افغان حکومت سے اس سلسلے میں بات کرنی چاہئے تاکہ دونوں ممالک کے مابین اپنی کرنسیوں میں تجارت جاری رہے۔

Advertisement
Central Desk
Central Desk
Central News Desk.

Must read

Recent News

Can the Turkey-Syria earthquakes impact the Eurasian and Indian plates where Pakistan is situated?

Can the Turkey-Syria earthquakes impact the Eurasian and Indian plates where Pakistan is situated?

0
Monitoring Desk: Turkish earthquake of February 6, was a magnitude 7.8 out of 10 on the moment magnitude scale (MMS) that has shaken tectonic...

Ambassador Masood Khan expresses his heartfelt sympathies with Turkish Counterpart

0
WASHINGTON D.C: The Ambassador of Pakistan to the United States Masood Khan has expressed his heartfelt sympathies and deep condolences to his Turkish Counterpart...
Best Hair Salon Dubai

The 10 best hair salons in Dubai

0
Dubai, a global getaway destination, is home to some of the best experiences. Be it business or pleasure, Dubai has it all. Being a...
Changan Aslvin price

Changan Alsvin price increased again!

0
The economy of Pakistan is under a lot of external pressure. The repercussions are being inflicted on every level of the nation’s infrastructure. Pakistan’s...

Pakistan dispatches humanitarian assistance to Turkiye and Syria

0
ISLAMABAD, Pakistan: The people and government of Pakistan have extended deep grief to the brotherly Countries of Turkiye and Syria hit by a massive...
Advertisement